You are here
Home > اسپشیل اسٹوریز > اسلامی واقعات > حضرت پیر شاہ جیونہ ؒ :ہزاروں غیر مسلموں کو مشرف بہ اسلام کرنے والے ولی اللہ کی کرامات اس تحریر میں ملاحظہ کیجیے

حضرت پیر شاہ جیونہ ؒ :ہزاروں غیر مسلموں کو مشرف بہ اسلام کرنے والے ولی اللہ کی کرامات اس تحریر میں ملاحظہ کیجیے

لاہور(ویب ڈیسک)حضرت پیر شاہ جیونہ باکرامت فقیر تھے۔جب آپ قنوت میں تھے وہاں کے راجہ کے بیٹے کو پیٹ میں چاقو لگ گیا جس سے اس کی موت ہو گئی۔آپ نے اللہ سے دعا کی اور کلام پاک کی آیات پڑھ کر بچے کی ہیٹ ہر ہاتھ پھیرا۔اللہ کے حکم سے بچہ زندہ ہو گیا۔

مشہور صحافی غلام رضا اپنی اس رپورٹ میں لکھتے ہیں۔۔۔ ۔جس سے آپ شاہ جیونی پاٹے سیونا مشہور ہو گئے۔اور آپ کی اس کرامت کو دیکھ کر راجہ اور اس کی رعایت کے لوگ حلقہ بگوش اسلام ہو گئے۔ہاتھ ہے اللہ کا بندہ مومن کا ہاتھ۔۔۔غالب وکارآفریں کار کشاہ کار ساز۔حضرت پیر شاہ جیونہ کو یہ کرامت ورثہ سے ملی تھی آپ کے جد امجد جلاالدین سرخ بخاری کے مطعلق بھی کتاب حذیقتہ الاولیاء کے صفحہ نمبر 150 پر لکھا ہے کہ آپ لڑکپن میں لڑکوں کے ساتھ کھیل رہے تھے کہ اچانک ایک میت کا جنازہ لایا گیا۔آپ ان کے پاس گئے اور میت کو دفن کرنے سے روک دیا پھر آپ نے اللہ اکبر کا نعرہ لگایا، مردہ کو مخاطب کر کے فرمایا تم باذن اللہ مردہ فی الفور جی اٹھا اور چالیس برس تک زندہ رہا ۔اسی طرح کتاب انوارالاولیاء مولفہ رائیس احمد جعفری میں حضرت شاشاہ جیونہ نے بھی اس قسم کی کرامت دکھائی تھی۔ حضرت پیر شاہ جیونہ 1558ءتبلیغ دین کیلئے قنوج(بھارت)سے پیل پدھراڑ کے علاقہ میں تشریف لائے، ہیاں کے قبائل کو کلمہ حق پڑھایا یہ علاقہ پہلے بلکل بنجر تھا لیکن آپ کی برکت سے سر سبزو شاداب ہو گیا، لوگوں نے آپ کی کرامات کو دیکھ کر جوق در جوق اسلام قبول کرنا شروع کر دیا ۔پیل دھراڑ سے آپ جھنگ میں موجودہ قصبہ شاہ جیونہ کے علاقہ تشریف لائے یہ علاقہ بھی غیر آباد تھا اور اس علاقی کو رڑا (بنجر)کہتے تھے آپ نے دعا کی اور فرمایا کہ یہ رڑا نہیں گھیودا گھڑا ہے آپ کے اس فرمان کے بعد یہ علاقہ آناد ہونا شروع ہو گیا اور دیکھتے ہی دیکھتے ہر طرف ہرے بھرے کھیت دکھائی دینے لگے ۔حضرت پیر شاہ جیونہ تاریک الدی فقیر نہیں تھے آپ ہر وقت خدمت خلق میں مصروف رہتے تھے اور لوگوں کو درس قرآن و درس حدیث دیتے رہتے تھے آپ کو سورہ مزمل سے خصوصی طور پر عشق تھا۔آپ سورہ مزمل کی تعلیمات سے عوام الناس کو روشناس بھی کراتے اورت اس سورہ مبارکہ کا ورد بھی کرتے رہتے تھے۔روایت ہے لہ آپ نے سورہ مزمل کا کروڑ دفعہ ورد کیا جس کی وجہ سے آپ پیر کروڑ یہ مشہوور ہو گئے۔(ش۔ز۔م)


Top