You are here
Home > اسپشیل اسٹوریز > اسلامی واقعات > مسجد میں کرسی پر بیٹھ کر نماز پڑھنا جائز ہے یا ناجائز ؟ نامور پاکستانی عالم دین نے فتویٰ جاری کر دیا

مسجد میں کرسی پر بیٹھ کر نماز پڑھنا جائز ہے یا ناجائز ؟ نامور پاکستانی عالم دین نے فتویٰ جاری کر دیا

لاہور(ویب ڈیسک )نماز کی ادائیگی یا دیگر اجتماعات کے دوران مساجد میں بہت سے لوگ کرسیوں پر بیٹھے محو عبادت نظر آتے ہیں۔ان میں نوجوان بھی ہوتے ہیں اور بوڑھے ہیں۔بہت سے لوگ اس پر اعتراض بھی کرتے ہیں کہ اچھے بھلے لوگ تھوڑی سی تکلیف سے گبھرا کر کرسی پر بیٹھ جاتے ہیں


جبکہ وہ لوگ جو نیچے بیٹھ کر قرآن مجید پڑھ رہے ہوتے ہیں انکی بے ادبیہوتی ہے ۔ان مسائل پر ممتازمفتی محمد شبیر قادری کا کہنا ہے کہ اگر کسی شخص کو واقعی کرسی کے علاوہ بیٹھنے میں تکلیف ہو تو وہ مسجد میں کرسی پر بیٹھ کر نماز پڑھ سکتا ہے اور درسِ قرآن و محافل بھی کرسی پر بیٹھ کر سن سکتا ہے۔ قرآنِ مجید میں اللہ تعالیٰ نے سورہ بقرہ میں ارشاد فرمایاہے ’’اللہ کسی جان کو اس کی طاقت سے بڑھ کر تکلیف نہیں دیتا‘‘ قرآنِ مجید میں دوسرے مقام پر اللہ تعالیٰ نے اپنا اصول بیان فرمایا ہے کہ’’ اس نے تم پر دین میں کوئی تنگی نہیں رکھی‘‘مفتی محمد شبیر قادری کا کہنا ہے کہ جس طرح قرآنِ مجید پڑھنے والے کے پاس کھڑے ہونے میں کوئی بے ادبی نہیں اسی طرح قرآنِ مجید پڑھنے والے کے پاس کرسی پر بیٹھنے میں بھی کوئی حرج نہیں۔ صرف پاؤں قرآن مجید کی طرف یا اس سے بلند نہیں ہونے چاہئیں۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا ارشاد ہے کہ ’’لوگوں پر آسانی کرو اور ان کو مشکل میں نہ ڈالو، لوگوں کو آرام پہنچاؤ اور ان کو (اسلام سے) متنفر مت کرو ‘‘لہٰذا آدابِ مسجد کو ملحوظِ خاطر رکھتے ہوئے بلاعذرِ شرعی کرسی پر بیٹھنا کراہت سے خالی نہیں، تاہم جس شخص کے لیے زمین پر بیٹھنا مشکل ہو وہ مسجد میں کرسی پر بیٹھ سکتا ہے۔(ع،ع)


Top