You are here
Home > انٹر نیشنل > ارے یہ کیا ہو رہا ہے ؟ پاکستان کے اسرائیل سے رابطے۔۔۔۔۔اب تک کا سب سے بڑا دعویٰ سامنے آگیا

ارے یہ کیا ہو رہا ہے ؟ پاکستان کے اسرائیل سے رابطے۔۔۔۔۔اب تک کا سب سے بڑا دعویٰ سامنے آگیا

نیو دہلی(ویب ڈیسک )کیا واقعی پاکستان اسرائیل سے اپنے راوبط قائم کر رہا ہے یا پھر یہ سب کسی گیم کا حصہ ہے ۔ ایک دعویٰ کے مطابق پاکستان اسرائیل سے تعلقات کا خواہاں ہے۔ کہا جا رہا ہے کہ اگر خطے کی سیاسی صورتحال میں بہتری آئی تو پاکستان اسرائیل کے ساتھ اپنے تعلقات بڑھائے گا ۔

تفصیلات کے مطابق بھارت کے مؤقر جریدے ٹائمز آف انڈیا نے شاہ محمود قریشی کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ پاکستان اسرائیل سے تعلقات بڑھانے کا خواہاں ہے۔بھارتی میڈیا کے مطابق شاہ محمود قریشی نے میونخ میں ہونے والی سیکیورٹی کانفرنس کے دوران اسرائیلی صحافی کو دیے گئے انٹرویو میں کہا ہے کہ خطے کی سیاسی صورتحال میں بہتری آئی تو پاکستان اسرائیل کے ساتھ اپنے تعلقات بڑھانے میں دلچسپی رکھتا ہے۔شاہ محمود قریشی کے اس بیان کو غیر معمولی اہمیت حاصل ہو گئی ہے کیونکہ دیگر مسلم ممالک کی طرح پاکستان نے بھی اسرائیل کو تسلیم نہیں کیا اور دونوں ممالک کے درمیان کوئی سفارتی تعلقات نہیں ہیں۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان کو اسرائیل کے ساتھ اپنے تعلقات میں آگے بڑھنے سے دلچسپی ہے جب کہ فلسطین اسرائیل تنازعہ کے حل میں ہونے والی کوئی پیش رفت بھی کافی مددگار ثابت ہو سکتی ہے۔انہوں ںے کہا کہ اگر امریکی منصوبہ ایسا کرنے میں کامیاب ہو جاتا ہے تو یہ بہتر ہو گا۔ ہم اسرائیل کے لیے نیک تمناؤں کا اظہار کرتے ہیں۔ اس خطے میں ہمارے کئی دوست ہیں اور ہم چاہیں گے کہ وہ بھی رابطہ کریں۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پاکستان اور اسرائیل نے ماضی میں بھی ایک دوسرے سے قریب آنے کی کوشش کی تھی

اور یکم ستمبر 2005 کو استنبول میں ہونے والے اجلاس میں پاکستان اوراسرائیل کے وزرائے خارجہ کی ملاقات کی تشہیر ہوئی تھی اور اس سے چند ہفتے قبل پاکستانی صدر پرویز مشرف اور اسرائیلی وزیر اعظم ایریئل شیرون نے مصافحہ کیا تھا۔کئی اسلامی ممالک کے اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات نہیں ہیں لیکن اب اکثر مسلم ممالک اور اسرائیل ایران سے لاحق مبینہ خطرے کی بنیاد پر ایک دوسرے کے قریب آ رہے ہیں۔نجی نیوز چینل سے بات چیت کرتے ہوئے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا یہ مکمل طور پر مسخ شدہ خبر ہے ۔ میں اس خبر کا جواب دے دوں گا۔ یار دہے کہ ماضی میں اسرائیلی طیارے کی لینڈنگ کا معاملہ اس وقت منظرعام پر آیا جب اسرائیلی صحافی کی جانب سے سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پر ایک ٹوئٹ میں کہا گیا کہ اسرائیلی طیارے نے تل ابیب سے پاکستان کے دارالحکومت میں لینڈ کیا اور دس گھنٹے پاکستان کی سرزمین پر گزارنے کے بعد واپس تل ابیب گیا۔اسرائیلی صحافی کی ٹوئٹ سامنے آتے ہی سوشل میڈیا پرافواہوں نے تہلکہ مچا دیاتھا ۔ اسرائیلی طیارے کو لے کر پھیلی افواہوں پر پاکستان میں ملا جلا رجحان پایا گیا، جہاں کچھ لوگوں نے اس خبر پر تشویش کا اظہار کیا وہی پاکستان کے کچھ نامور صحافیوں سمیت کئی لوگوں نے اس امر کا خیر مقدم کیا اور پاکستان اور اسرائیل کے مابین تعلقات بڑھانے میں دلچسپی کا اظہار کیا۔


Top