You are here
Home > پا کستا ن > شریف خاندان کے لیے ایک اور برا دن ۔۔۔ سپریم کورٹ نے ایک اور اہم ترین درخواست مسترد کرتے ہوئے تاریخی فیصلہ سنا دیا

شریف خاندان کے لیے ایک اور برا دن ۔۔۔ سپریم کورٹ نے ایک اور اہم ترین درخواست مسترد کرتے ہوئے تاریخی فیصلہ سنا دیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک )سپریم کورٹ آف پاکستان نے شریف خاندان کی شوگر ملز کی منتقلی سے متعلق عدالتی فیصلے نظرثانی کیخلاف نظرثانی کی درخواستیں خارج کردیں۔ تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں جسٹس عظمت سعید شیخ کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے شریف خاندان کی شوگرملز کی منتقلی سے متعلق عدالتی فیصلے

کیخلاف نظرثانی کی درخواستوں کی سماعت کی۔ وکیل شوگر مل ملک قیوم نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ ہائیکورٹ نے کہاتھاآپ شوگرمل منتقلی روکنے کیلئے حکومت کودرخواست دے سکتے ہیں، میرے موکل کی مل پاکپتن میں تھی جو بہاولپور لے گیا،وکیل شوگر مل ملک قیوم نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے میں حکومت کی اجازت کاکوئی ذکرنہیں۔ جسٹس عظمت سعید شیخ نے کہا کہ کیا ہم نے آپ کادروازہ بندکیا ہے کہ نہیں جاسکتے،وکیل ملک قیوم نے کہا کہ میں اپنی مل واپس پاکپتن کیسے لے جاؤں،وہاں گنے کی کاشت ہی نہیں ہوتی،جسٹس عظمت سعید شیخ نے کہا کہ کیا ہم آرڈر کریں کہ وہاں گنا اگایا جائے؟۔ وکیل شریف خاندان سبطین فضلی نے کہا کہ پنجاب انڈسٹریزایکٹ کی مطابق کوئی مل حکومت کی اجازت سے لگائی جاسکتی ہے،جسٹس عمر عطا بندیال نے سبطین فضلی سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ کیا عدالت نے مل منتقلی سے متعلق حکومتی پالیسی پربحث نہیں کی؟ سبطین فضلی نے کہا کہ عدالتی فیصلے میں منتقلی کو مدنظرنہیں رکھا گیا،عدالتی فیصلے کے مطابق بھی مل ایک ضلع سے دوسرے ضلع منتقل ہوسکتی ہے۔ سپریم کورٹ آف پاکستان نے شریف خاندان کی شوگر ملز کی منتقلی سے متعلق عدالتی فیصلے نظرثانی کیخلاف نظرثانی کی درخواستیں خارج کردیں۔

دوسری جانب اسلام آباد ہائی کورٹ میں نواز شریف کی درخواست ضمانت مسترد کر دی گئی ہے اسلام آباد ہائی کورٹ کے دو رکنی بینچ نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ نوازشریف طبی بنیادوں پر ضمانت کے مستحق نہیں ہیں کیونکہ جو میڈیکل رپورٹیں جمع کرائی گئی ہیں ان کے مطابق نوازشریف کی جان کو کوئی خطرہ لاحق نہیں ہے – اسلام آباد ہائی کورٹ کے دو رکنی بینچ نے جس وقت یہ فیصلہ سنایا اس وقت سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی سمیت مسلم لیگ نون کے متعدد مرکزی رہنما اور کارکنوں کی بڑی تعداد وہاں موجود تھی – عدالت نے اپنے فیصلے میں یہ بھی کہا ہے یہ کیس غیر معمولی حالات کا نہیں ہے – فیصلہ آنے کے بعد مسلم لیگی رہنماؤں شاہد خاقان عباسی اور خواجہ آصف نے کہا کہ عدالت کا احترام کرتے ہیں تاہم اس فیصلے سے مایوسی ہوئی ہے- انہوں نے کہا اس سلسلے میں اپیل کریں گے اور مزید قانونی راستوں کو اپنایا جائے گا – نوازشریف کو العزیزیہ ریفرنس میں سات سال قید کی کی سزا ہوئی ہے – اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کے اختتام میں کہا گیا کہ یہ ’درخواست میرٹ پر پوری نہیں اترتی‘ اور اسے اس بنیاد پر مسترد کیا جاتا ہے۔ واضح رہے کہ شرجیل انعام میمن کی طبی بنیادوں پر ضمانت کی درخواست کو مسترد کردیا گیا تھا۔


Top