سعودی عرب سے قرضہ کن شرائط پر لیا گیا،شرح سود آئی ایم ایف جتنا،وزرات خزانہ نے عوام پر بجلیاں گرا دی

" >

اسلام آبد(ویب ڈیسک)ترجمان وزارت خزانہ مزمل اسلم کے مطابق کابینہ نے سعودی عرب سے 4.2 ارب ڈالرز قرض کی منظوری دی جبکہ سعودی عرب سے 3 ارب ڈالر کا قرضہ 4 سے3.8 فیصد شرح سود پر لیا گیا۔ترجمان وزارت خزانہ نے بتایا کہ رقم واپس لینےکا اختیار ادھار دینے والے ملک کے پاس ہوتا ہے

کسی تنازع کی صورت میں ادھارواپسی اورشرح سود کا اطلاق ادھار دینے والے ملک قوانین کے مطابق ہوتا ہے ۔وزارت خزانہ کے مطابق ادھار لیتے وقت ملکی خودمختاری پر سمجھوتہ نہیں کیا گیا، جبکہ قرض دینے پر سعودی عرب کے شکرگزار ہیں۔یاد رہے کہ وزیراعظم کے حالیہ دورہ سعودی عرب کے بعد وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے بتایا تھا کہ سعودی عرب نے پاکستان کو 3 ارب ڈالرز کے سپورٹ فنڈ کا اعلان کیا ہے،یاد رہے کہ یہ رقم سعودی فنڈ برائے ترقی اسٹیٹ بینک آف پاکستان میں جمع کرائے گا۔جس کو پاکستان استعمال نہیں کر سکے،یہ رقام صرف ملکی ذخائر پر دباؤ ختم کرنے میں مدد فراہم کرے گی

?>

اپنا تبصرہ بھیجیں