بڑے فنڈ میں اربوں روپوں کی کرپشن پکڑی گئی،چونکا دینے والے حقائق منظر عام پر،حکومت کا بھی آڈٹ کرانےکا اعلان

" >

اسلام آباد(ویب ڈیسک)ترجمان وزارت خزانہ نے کہا ہے کہ کورونافنڈز کے آڈٹ کی شرط عالمی مالیاتی پروگرام( آئی ایم ایف) پروگرام کاحصہ ہے،کورونا فنڈز کی آڈٹ رپورٹس پر آئی ایم ایف مطمئن ہے۔

چندروزقبل آڈیٹر جنرل آف پاکستان نےرپورٹ جاری کرتےہوئےانکشاف کیا تھا کہ کورونا وائرس کیلئے مختص فنڈز میں اربوں روپے کی مالی بے ضابطگیاں سامنے آئی ہیں۔ جبکہ وینٹی لیٹرز کی خریداری میں کروڑوں روپےکی مالی بےضابطگیاں پائی گئیں۔رپورٹ کےمطابق اشیاء کی خریداری کےدوران قوانین کی خلاف ورزی کرتےہوئے معاہدے کیے گئے۔ ‏

کورونا کے دوران 140 مردہ افرد کے نام پر بھی خطیر رقوم کی تقسیم کا انکشاف، ریسورس مینجمنٹ سسٹم کی تنصیف میں پروکیورمنٹ قوانین کی خلاف ورزیاں کی گئی۔

ترجمان وزارت خزانہ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ پاکستان کوکورونافنڈزکے آڈٹ کی شرط اپریل 2022میں پوری کرنی تھی،کورونا فنڈز آڈٹ رپورٹ آئی ایم ایف کو پیش کی گئیں،ترجمان وزارت خزانہ کا کہنا تھاکہ آڈٹ رپورٹس پارلیمنٹ میں پیش کی گئیں، آڈٹ رپورٹ میں تکنیکی خامیوں کی نشاندہی کی گئی ہے، آڈٹ رپورٹ ڈیپارٹمنٹل کمیٹی میں بھی ڈسکس کی گئی ہے،ترجمان کا کہنا تھا کہ کورونا فنڈز کی آڈٹ رپورٹس پر آئی ایم ایف مطمئن ہے۔

?>

اپنا تبصرہ بھیجیں