آغاسراج درانی کی گرفتاری! پی پی رہنماء نے عدالت میں کس بڑی خواہش کا اظہارکردیا؟

" >

اسلام آباد(ویب ڈیسک) پیپلز پارٹی کے رہنما اور سپیکر سندھ اسمبلی کو گزشتہ دن نیب نے سپریم کورٹ کے احاطے سے باہر نکلتے ہی گرفتار کر لیا تھا۔جنہیں آج سخت سکیورٹی میں نیب عدالت میں پیش کیا گیا۔اور ان کے دو دن کے راہداری ریمانڈ کی استدعا کی

نیب پراسیکیوٹر نے عدالت سے آغا سراج کے دو دن کے راہداری ریمانڈ کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ آغا سراج کے وارنٹ گرفتاری ہیں، ان کو پہلی دستیاب پرواز سے کراچی منتقل کیا جائے گا لہٰذا ریمانڈ منظور کیا جائے۔

نیب کی استدعا کے بعد جج محمد بشیر نے آغا سراج درانی سے استفسار کیا کہ لگتا ہے کہ اپ کچھ کہنا چاہتے ہیں۔جس پر آغا سراج درانی نے جج سے درخواست کی کہ آج شام کی فلائٹ ہے۔انہیں حکم دیں کہ جلد از جلد کراچی بھجوا دیا جائے
عدالت نے نیب پراسیکیوٹر کی استدعا پر آغا سراج درانی کا دو روز کا راہداری ریمانڈ منظور کرلیا۔

واضح رہےکہ آغا سراج درانی نے آمدن سے زائد اثاثوں کے کیس میں سپریم کورٹ میں درخواست ضمانت دائر کی تھی لیکن عدالت نے انہیں سندھ ہائیکورٹ کے حکم کی تعمیل کرتے ہوئے نیب کےسامنے سرینڈر کرنے کا حکم دیا۔

عدالتی حکم کے بعد آغا سراج کئی گھنٹے عدالت میں موجود رہے تاہم عدالت سے باہر آنے پر نیب نے انہیں گرفتار کرلیا۔

?>

اپنا تبصرہ بھیجیں