پاکستانی نوجوان کتنے قابل ہیں؟وزیر اعظم نے کھل کر بتا دیا

" >

اسلام آباد(ویب ڈیسک)وزیر اعظم کی زیر صدارت اجلاس ہوا۔جس میں اسپورٹس پالیسی اوراسپورٹس بورڈکےانتظامی ڈھانچے کی ازسرِنوتشکیل کاجائزہ لیاگیا۔

اسپورٹس بورڈ ، نیشنل اسپورٹس پالیسی اور صوبوں سے مشاورت پر بریفنگ میں بتایا کہ پاکستان اسپورٹس بورڈ کا آئینی مسودہ تیار ہے ،بورڈ اور ایگزیکٹو کمیٹی کے ارکان کی تعداد کو محدود رکھا گیا ہے۔

اجلاس کو بریفنگ میں بتایا مسودے میں کھیلوں کےفروغ اور مثبت مقابلے کی فضاکا خاص خیال رکھا گیا ہے، آئین کے تحت ادارے کا نیا انتظامی ڈھانچہ بھی تیار کیا گیا ہے۔بریفنگ میں کہا گیا کہ نیا آئینی مسودہ سی سی ایل سی سے منظور ہوچکا ہے، مختلف کھیلوں کی فیڈریشنز کےلیےہدایات بھی جاری کی گئی ہیں۔اجلاس کو صوبوں سے نیشنل اسپورٹس پالیسی کی تیاری پر مشارت سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا گیا صوبوں سےتعاون بڑھا کرمیں کھیلوں کی سرگرمیاں بڑھائی جائیں گی اورصوبےکھیلوں کے فروغ ،کلبز و ایسوسی ایشنز کو سہولتیں فراہم کریں گے، مقامی سطح پرصوبوں کی طرف سے اہم کھیلوں پرترجیحی توجہ دی جائے گی۔

وزیراعظم نے جاری منصوبوں پرکام معینہ مدت میں مکمل کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا نوجوانوں کو کھیلوں کی سہولتیں دینا حکومت کی اولین ترجیحات میں ہے، مقامی سطح پرکھیلوں میں شرکت سےنوجوانوں کومواقع دیےجائیں گے۔عمران خان کا کہنا تھا کہپاکستان اسپورٹس بورڈ ریگولیٹر کے طور پر کام کرے گا، اسپورٹس بورڈ کھیلوں کی معیاری سہولتوں کی فراہمی یقینی بنائےگا، کھیلوں میں نوجوانوں کی شرکت بڑھنے سےکھیلوں کا معیار بہتر ہوگا۔

وزیر اعظم نے مزید کہا کہ پاکستانی نوجوان دنیاکاہر میدان فتح کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں

?>

اپنا تبصرہ بھیجیں