پیپلز پارٹی کی پنجاب میں ایک بار پھر دھواں دھار انٹری

" >

لاہور(ویب ڈیسک)این اے 133 کے ضمنی انتخابات میں جہاں ن لیگ کی امیدوار نے کامیابی حاصل کی وہی ان کے ووٹوں کی تعداد 2018 کے جنرل الیکشن کی نسبت انتہائی کم رہی۔

دوسری طرف 2018 کے الیکشن میں پانچ ہزار پانچ سو پچاسی ووٹ لینے والی پیپلز پارٹی نے اس بار بتیس ہزار تین سو 12 ووٹ لیکر سب کو حیران کر دیا

تمام 254 پولنگ اسٹیشنز کے غیرحتمی و غیرسرکاری نتائج کے مطابق مسلم لیگ ن کی شائستہ پرویز 46811 ووٹ لےکر کامیاب قرار پائیں۔

غیرسرکاری نتیجے کے مطابق پیپلزپارٹی کے اسلم گِل 32313 ووٹ لے کر دوسرے نمبر پر رہے۔ن لیگ کو ضمنی انتخاب میں این اے 133کی نشست پردو ہزار اٹھارہ کے الیکشن کے مقابلے میں بیالیس ہزار888ووٹ کم ملے جبکہ دو ہزار اٹھارہ کے الیکشن میں مسلم لیگ ن کے پرویزملک نے اناسی ہزارچھ سو نناوے ووٹ لیے تھے

پیپلزپارٹی کے اسلم گِل نے 2018 کے انتخابات کے مقابلے میں چھبیس ہزار سات سو اٹھاسی ووٹ زیادہ حاصل کیے جبکہ انہوں نے 2018 کے الیکشن میں پانچ ہزار پانچ سو پچاسی ووٹ لیے تھے۔

2018 کے الیکشن میں تحریک انصاف کے اعجازچوہدری نےستترہزار293ووٹ لیےتھے تاہم این اے133کے ضمنی الیکشن میں پی ٹی آئی کا کوئی امیدوار میدان میں نہیں تھا۔

?>

اپنا تبصرہ بھیجیں